Top searched

Saved words

Top searched

munsif-mizaaj

temperament of justice, fair-minded, lover of justice, just-minded, just in temperament, (a person) of propriety or taste

poshiida

concealed, hidden, secret, covered, veiled

furqat

separation (of lovers), absence (of a beloved person or friend)

Gaazii

one who fights against infidels

fard-e-jurm

charge sheet, indictment, calendar of crime

hijrat

migration, leaving of country and friends

maarg

mirgii kaa daura

epileptic seizure/ fit

chaubaaraa

top room of a house with windows on all four sides, topmost storey of a house

saraab

a vapour resembling the sea at a distance (formed by the rays of the sun or moonlight on a sandy plain)

harfii

literal, relating to letters

maa'zarat

excuse, apology, plea

naa.ib-qaasid

muKHtasar

short, succinct, abbreviated, abridged, concise

bezaar

sick of, displeased, tired of, weary, vexed, disgusted, apathetic, out of humour

gardan par chhurii phernaa

sang-e-maahii

the genus of aquatic animal whose back is hard like stone

musalsal

'ahd-e-vafaa

fulfill the promise

tark-e-duniyaa

abandoning worldly pleasures, becoming hermit

saffaak

a great shedder of blood, a cruel man, a butcher, tyrant

subuk-KHiraam

fast walker, fast runner, fast speed

me'yaar

an assay-balance, a touchstone

khisyaanii billii khambaa noche

an embarrassed or ashamed person tends to vent his/her feeling by quarrelling

shariik-e-hayaat

life partner, wife or husband mostly used for wife

lams

sense of touch, tactile sense

iKHtiyaar

jurisdiction, management, rule, sway

chaukaa cha.Dhaanaa

fixing dentures, fixing artificial teeth

gardish

faash

apparent, revealed, divulged, known, manifest, obvious

du'aa mustajaab honaa

mustajaab

qurbat

tifl-e-maktab

a school boy, inexperienced

yaum-e-vilaadat

birthday

az-sar-e-nau

anew, afresh, over again

kam-zarf

poor-spirited, Shallow, of little capacity, stupid, silly, witless

ruu-posh

hiding the face

zuud-pashemaan

repenting too soon, one who repents soon

dastaras

range of authority or control, within (one's) reach or power; to be reached with the hand, come to hand, able, approach, access, command, control

polaj

land sown every year

shiddat

abundance (of thirst, tears or lamentation, etc.)

musht-e-KHaak

(Literary) handful of dust, human being, man

aziyyat

wanton injury, molestation, annoyance, oppression

sinf

genre, sex, gender, species

faasiq

sinner, transgressor, adulterer, fornicator, rake, impious, vicious, scoundrel

'ohde

commission, office, post

munaafiq

hypocritical, a hypocrite, dissembler

mutma.in

In a state of rest, or ease, or quiet, enjoying repose and ease, still, quiet, tranquil, content, safe, secure

Urdu

Rekhta, Hindawi

sinf-e-suKHan

genre of poetry, form of poetry

aahan

iron, steel

jaan-e-man

(Literary) my life, my dear, darling

matlab

mean, sense, meaning, motive, aim, object, concern, purpose, wish, desire, selfishness, question, petition

'ahd

time, season, epoch, age

Gizaa-e-saqiil

heavy or hard to digest food

Garq

drowning, sinking, immersion

ham-'ahd

contemporary, coeval

'ahd-e-hukuumat

period of reign, period of rule

'ahd-e-nau

modern or present age

tajdiid

renewal, revival, novelty, renovation

KHud-saaKHta

home-made, self-appointed, self-styled

qanaa'at

contentment, satisfaction, tranquility, abstinence, ability to do without

Gair-muhazzab

uncivilized, uncultured

raqs

dance, dancing

'umr-e-daraaz

long-life, may (your) life (be) long

tazliil

humiliation, abasement, indignity, disgrace, degradation

qaul-e-faisal

ultimate judgement, statement that settles an issue

zulf-e-daraaz

long tresses, long locks

sarzanish

reprimand, chiding, dressing down, reproof, rebuke, reprehension

saqaafat

customs and beliefs of a specific country or group, culture

'avaamunnaas

public, common people, populace at large

aa.iin

constitution, law, code, enactment, regulation, statute, set rules or laws

zinaa-bil-jabr

rape, ravishment

e'timaad

confidence, faith, trust, reliance, dependence

e'tibaar

confidence, trust, belief, faith, reliability, credibility

baad-e-sabaa

morning breeze, the zephyr, a refreshing wind

rashk

the process of copying something achieved by someone else and trying to do it as well as they have, effort to match or surpass a person or achievement, typically by imitation, emulation

'alaamat-e-buluuG

sign of puberty, signs of being young

qaumii-salaamatii

national security, the safety of a nation, or actions taken to protect it

ziist

life, existence

'azm-e-safar

determination to travel

raqiib

a watcher, guardian

alfaaz

words, articulate sounds, terms

qillat

littleness, smallness; fewness, paucity, deficiency, scarcity, insufficiency

amvaat

deaths

taGaaful

feigned negligence, intentional connivance

firaaq

separation, disunion, abandonment

bad-nasiib

unfortunate, unlucky

'aduu

enemy, foe, oppositionist , opponent,

anjum

stars

'adl

justice, fairness, equity, rectitude

chilman

a hanging screen made of reeds or spilt bamboo for obstructing view, curtain, a venetian blind

difaa'

defence, repulsion

ulfat

love, affection, friendship, intimacy, familiarity, attachment, kindness

ranjish

indignation, grief, unpleasantness (between persons)

samaa'at

hearing, listening, (of a lawsuit)

dil-aazaarii

heart afflicting, torment of the heart, vexation of spirit, anxiety, trouble

tauhiin-e-'adaalat

contempt of court

mansuuba

plan, design, scheme, project

'adaavat

hostility, malice, enmity, animosity, hate, hatred, resentment, vindictiveness, malice, feud

'azm

determination, resolution, intention, fixed purpose, bent, aim, undertaking

shab

night, night time

aaftaab

sun

Home / Blog / kaTh hujjati ho ya kaT hujjati, hain donon buri

kaTh hujjati ho ya kaT hujjati, hain donon buri

by احمد حاطب صدیقی (ابو نثر) 15 December 2021 5 min Read

kaTh hujjati ho ya kaT hujjati, hain donon buri

مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے سابق صدر نشیں محترم مولانا مفتی منیب الرحمٰن صاحب حفظہٗ اللہ اپنے تازہ مکتوب میں رقم طراز ہیں:

’’ہم ’کٹ حجتی‘ لکھتے اور بولتے رہے ہیں۔ ریختہ میں بھی ہم نے دیکھا تو کٹ حجتی ہی ہے۔ ’’کٹ حجتی‘‘ کے معنی ہیں: ’’خواہ مخواہ کی بحث، بحث برائے بحث،اپنی بات پر اڑنا، ضد سے کام لینا، بے جا حجت‘‘۔ لیکن جناب ابونثر نے ’’کٹھ حجتی‘‘ لکھا ہے، آیا یہ زیادہ فصیح ہے یا کاتب کی غلطی ہے؟‘‘ ( ہفت روزہ ’’فرائیڈے اسپیشل‘‘ ۳ دسمبر ۲۰۲۱ء)

سب سے پہلے تو ہم محترم مفتی صاحب کا تہِ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں کہ اپنی گوناگوں مصروفیتوں کے باوجود آپ ہم جیسے کم علم کالم نگاروں کو بھی لائقِ اعتنا گردانتے ہیں، پوری توجہ سے کالم پڑھتے ہیں اور رہنمائی بھی فرماتے ہیں۔ اللہ ان کی عمر میں برکت دے۔

جہاں تک کٹ اور کٹھ کا تعلق ہے تو ’کٹ‘ بھی ’کٹھ‘ ہی کی بدلی ہوئی صورت ہے۔ اصلاً یہ ’کٹھ‘ ہی تھا، مگر ممکن ہے کہ کسی کٹھ حجت نے دو چشمی ’ھ‘ کو کاٹ کھایا ہو اور کٹ حجتی شروع کردی ہو۔ حجت بازی بڑھ جانے سے اب کٹ حجتی اور کٹھ حجتی (یا کٹ مُلّا اور کٹھ مُلّا) ایک دوسرے کے متبادل ہوگئے ہیں۔ زیادہ فصیح کیا ہے، اس کا فیصلہ تو فصحا ہی کرسکتے ہیں۔ مفتی صاحب نے ’ریختہ‘ کا حوالہ دیا ہے تو ’ریختہ‘ پر بھی کٹھ حجت اورکٹھ حجتی، دونوں تراکیب مُندرج ہیں۔ نوراللغات میں بھی کٹ حجت اور کٹھ حجت ہر دوالفاظ براجمان ہیں۔

’کٹھ‘ اصل میں کاٹھ کا مخفف ہے۔ اسی سے ’کٹھ پتلی‘ ہے، جو یہ کہہ کرکسی مسند پر بٹھا دی جاتی ہے کہ ’’یہی فیصلہ عوام کا ہے‘‘۔ کٹھ پتلی، کاٹھ یعنی لکڑی سے بنی ہوئی پُتلی کو کہتے ہیں۔ اہلِ تماشا اس میں ایسا دھاگا باندھ دیتے ہیں جو دُور سے نظر نہ آئے، پھر اُنگلی کے اشاروں سے جیسے چاہتے ہیں نچاتے رہتے ہیں۔ دوسرے کی عقل اور دوسرے کی رائے پر چلنے والے بے اختیار آدمی کو بھی کٹھ پتلی کہتے ہیں، خواہ وہ مرد ہو یا عورت۔ ’کاٹھ کا اُلّو‘ کنایۃً بے وقوف شخص کو کہتے ہیں۔ گھر کے ٹوٹے پھوٹے سامان کو ’کاٹھ کباڑ ‘ کہا جاتا ہے۔ گھوڑے کی پیٹھ پر رکھی جانے والی زین جس کے نیچے مضبوط لکڑی ہوتی ہے ’کاٹھی‘ کہلاتی ہے۔ توانا جسم کو بھی ’کاٹھی‘ سے تشبیہ دی جاتی ہے۔کہتے ہیں:
’’بوڑھے ہوگئے، مگر کاٹھی مضبوط ہے‘‘۔

ہُد ہُد، جس کا ذکر قرآنِ مجید میں بھی آیا ہے اور ایک معزز شاہی قاصد کے طور پر آیا ہے، درختوں کی پختہ شاخوں اور تنوں میں چونچ سے چھید کرکے آشیانہ بناتا ہے۔ اپنی اس حرفت پر اہلِ ہند سے داد پانے کی جگہ بے چارہ ’بے داد‘ پاتا ہے اور ہندی میں ’کٹھ پھوڑا‘ کہلاتا ہے۔ یعنی کاٹھ یا لکڑی پھوڑ ڈالنے والا۔

’کاٹھ ‘خشک اور مضبوط لکڑی کو کہا جاتا ہے۔ اس سے کاٹھ کا گھوڑا اور بچوں کے متعددکھلونے بنائے جاتے ہیں۔ بچوں ہی کے لیے کہی گئی ایک غزل میں چچا غالبؔ غزل خواں بچے کی زبان سے کہلواتے ہیں:

گر نہ ڈر جاؤ تو دکھلاؤں تمھیں
کاٹ اپنی کاٹھ کی تلوار کا

یہ غزل ’قادرنامہ‘ میں شامل ہے۔ قادر نامہ چچا نے بچوں کے ساتھ وہی مشغلہ اختیار فرماتے ہوئے لکھا ہے جو اُن کا لغوی بھتیجا یہاں اپنائے ہوئے ہے۔ یعنی الفاظ اور ان کے معانی سے کھیلنا۔ مثلاً:

رُوئی کو کہتے ہیں پنبہ سن رکھو
آم کو کہتے ہیں انبہ سن رکھو

اوپر،غزل والے شعر میں، چچا نے ’کاٹ‘ کو مذکر باندھ دیاہے، جب کہ لغات میں یہ ’اسمِ مؤنث‘ ہے۔ شاید ردیف کی مجبوری سے چچا کو اس لفظ کی جنس تبدیل کرنی پڑ گئی۔ ردیف کے ساتھ ساتھ یہ بھی دیکھیے کہ اسی غزل کے ایک شعر میں چچا بچوں کو کیا پٹّی پڑھا رہے ہیں:

وہ چُراوے باغ میں میوہ جسے
پھاند جانا یاد ہو دیوار کا

’کٹھ‘ کے وہ معانی جو حجتی کے گلے میں پہنادیے گئے ہیں دراصل کاٹھ ہی سے مشتق ہیں۔ سخت، اَڑیل، بے حس اور بے لچک۔ جو شخص (مفتی صاحب کے بتائے ہوئے معنوں کے مطابق) خواہ مخواہ کی بحث یا بحث برائے بحث کرتا ہو، اپنی بات پر اڑا رہتا ہو، ضد سے کام لیتا ہو، یا بے جا حجت کیے جاتا ہو، اُسے بھی خشک لکڑی یا کاٹھ کی طرح کا سخت، ناسمجھ، اڑیل ٹٹو جانیے۔ کٹھ حجت کہیں کا۔ خدانخواستہ اگر اِنھیں صفات کا حامل کوئی کم خواندہ، کج فہم اور کند ذہن مُلّا مل جائے تو ہمارے ہاں اُسے ’کٹھ مُلّا‘ کہہ دینا عام ہے۔

جیسا کہ اوپر عرض کیا،کٹ حجت یا کٹ حجتی میں ’کٹھ‘ ہی کثرتِ استعمال سے کٹ کٹاکر’ کَٹ‘ رہ گیا ہے۔ ورنہ لغت میں ’کٹ‘ کے جتنے معانی اور جتنے استعمالات ملیں گے ان کا تعلق کسی نہ کسی طور پر صرف ’کاٹنے‘ سے ہوگا، حتیٰ کہ دن، زندگی اور عمر بھی۔ نفیسؔ فریدی کو فکر تھی:

زندگی تو زندگی ہے کیسے کاٹی جائے گی
ایک دن کے کاٹنے میں جب کہ ہو جاتی ہے شام

’کٹ کے رہ جانا‘، ’کٹ کھنا شخص‘ (بات بات پرکاٹ کھانے والا) ’کٹا چھنی‘ یا ’ریل کا ڈبّا کٹ جانا‘ وٖغیرہ کہیں بھی کٹ کے وہ معانی نہیں ملتے جو ’کٹ حجتی‘ میں ہیں۔ البتہ ’کٹھ‘ میں حجت بازکی اُن تمام صفات کا احاطہ ہوجاتا ہے جو مفتی صاحب نے بیان فرمائی ہیں۔

کٹھ حجت یا کٹھ ملا کی ترکیب ادب میں جا بجا ملتی ہے۔ ’’اردو شاعری میں تصوف کی روایت‘‘ کے عنوان سے آلِ احمد سرورؔ لکھتے ہیں:

’’… تو یہ بات ذہن میں رکھنا چاہیے کہ جس طرح ملا،کٹھ ملائیت کا ترجمان ہے، اسی طرح یہ صوفی حقیقی صوفی نہیں ہے‘‘۔

اسرارؔ جامعی کی نظم ’’دلی درشن‘‘ کا ایک شعر ہے:

شر پنڈت، کٹھ مُلّا دیکھا
رام بھگت، عبداللہ دیکھا

کاٹھ کا مخفف ہونے کے علاوہ ’کٹھ‘ کے معانی محنت، مشقت اور ریاضت کے بھی ہیں۔ یہ’ کشٹ‘ کی بدلی ہوئی شکل ہے۔ اسی ’کٹھ‘ سے ’کٹھن‘ اور ’کٹھنائی‘ بنا ہے۔محنت و مشقت سے بنایا ہوا قلعہ یا حصار’کوٹھ‘ کہلاتا ہے۔ گودام یا ذخیرہ بھی کوٹھ کہا جاتا ہے۔ کوٹھ سے کوٹھا، کوٹھی اور کوٹھری بنالی گئی۔ غالباً یہی لفظ ’کوٹ‘ میں تبدیل ہو کر بستیوں کے ناموں کے ساتھ بھی لگ گیا۔سیال کوٹ، جام کوٹ، شور کوٹ اور راولا کوٹ وغیرہ۔

حجت کا مطلب دعویٰ، دلیل، بحث و تکراراور باہم جھگڑنا ہے۔ ’ احتجاج‘ اسی سے بنا ہے۔حجت کا ایک مطلب قصدو ارادہ کرنا یا بار بار آنا جاناہے۔’ حج‘ کی اصطلاح انھی معنوں سے اخذ کی گئی ہے۔فقہ میں ’حجت‘ اُس قولِ فیصل (فیصلہ کُن بات) یا دلیل کو کہتے ہیں جس کے بعد کچھ کہنے سننے کی گنجائش باقی نہ رہے۔ مثلاً: ’’اللہ کا حکم اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلّم کی سنت ہمارے لیے حجت ہے‘‘۔

بہر حال، کٹھ حجتی ہو یا کٹ حجتی، ہیں دونوں بُری۔ ان سے بچنے کا حکم ہے۔سورۃ المومنون کی آیت نمبر 3اور سورۃ الفرقان کی آیت نمبر 72 کی رُو سے اہلِ ایمان لغو، فضول، لایعنی اور لاحاصل باتوں سے منہ پھیر لیتے ہیں اور جہاں کسی قسم کی فضولیات ہو رہی ہوں وہاں سے ان کا گزرہو تو مہذّب طریقے سے کترا کر نکل جاتے ہیں۔

Delete 44 saved words?

Do you really want to delete these records? This process cannot be undone